سدھنوتی آزادکشمیر قلعاں تصادم میں زخمی ہونے والا شخص جان کی بازی ہار گیا، وزیر قانون سردار فاروق طاہر اور بقیہ تین افراد کے خلاف ایف آئی آر درج

سدھنوتی آزادکشمیر (نمائندہ کے ٹی) تفصیلات کے مطابق بلوچ کے نواحی علاقے قلعاں میں منگل کے روز ،آزاد کشمیر کے وزیر قانون سردار فاروق طاہر اسلامک ڈیویلپمنٹ کے تعاون سے تعمیر ہونے والی سکول کی عمارت کا افتتاح کرنے آئے تو تنازع شروع ہوا تھا جو بعد میں تصادم کی شکل اختیار کر گیا تھا۔ یہ اسکول پہلے مڈل تھا تاہم مطلوبہ تعداد پوری نہ ہونے کے باعث اسے مڈل سے پرائمری کر دیا گیا جس پر عوام غم و غصہ کا شکار تھے۔

گزشتہ روز وزیر قانون سردار فاروق طاہر منصوبہ کا افتتاح کرنا چاہتے تھے۔جس پر پیپلز پارٹی اور دیگر کارکنان نے وزیر حکومت کی طرف سے منصوبے اپنے نام کی تختی لگانے پر احتجاج شروع ہو گیا جو بعد ازاں ‌تصادم کی شکل اختیار کر گیا-تصادم کو روکنے کے لیے پولیس نے مظاہرین پرلاٹھی چارج کیا اور فائرنگ کی ، جس کے باعث متعدد مظاہرین زخمی ہوگئے۔ شدید زخمی افراد کو سی ایم ایچ راولاکوٹ منتقل کر دیا گیا تھا۔

زخمیوں میں بشارت نامی شخص شدید زخمی ہوا جو سی ایم ایچ راولاکوٹ میں زیر علاج تھا آج بشارت زخموں کی تاب نا لاتے ہوئے جابحق ہو گیا۔ واقعہ کی ایف آئی آر وزیر قانون اور باقی تین افراد کے خلاف درج کر دی گئی ہے۔
یاد رہے کہ گزشتہ روز تصادم کے بعد علاقے میں صورتحال کشیدہ ہو گئی اور عوام علاقہ اور اپوزیشن نے وزیر حکومت کے واپسی کے راستے بند کردئے جس سے وہ سکول کی عمارت میں محصور ہو کر رہ گئے تھے۔

مقامی ذرائع کا کہنا ہے کہ عوام علاقہ نے وزیر حکومت اور انکے سٹاف کی گاڑیوں کے ٹائروں سے ہوا نکال دی تھی اور حکومتی وزیر کے مستعفی ہونے اور فائرنگ کے احکامات پر مقدمہ درج کرنے کے مطالبات رکھے گئے تھے۔