کرونا کی تیسری لہر، پاکستان بھر میں ریکارڈ 201 اموات

این سی او سی کے مطابق پاکستان بھر میں 24 گھنٹے کے دوران کرونا سے مزید201 اموات ریکارڈ کی گئی ہیں۔ان میں سے 84 مریضوں کا انتقال وینٹیلیٹر پر ہوا۔

بدھ کو این سی او سی کے مطابق ایک دن میں کرونا کے5ہزار292 کیسز رپورٹ ہوئے ہیں۔ 24گھنٹے کے دوران کرونا کے49 ہزار101 ٹیسٹ کئے گئے جبکہ وائرس سے مجموعی اموات 17ہزار530ہوگئی۔ملک میں کرونا کے مثبت کیسز کی شرح 10.77 فیصد ہے۔

نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر کی جانب سے جاری کردہ تازہ ترین سرکاری اعداد و شمار کے مطابق گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران ملک بھر میں 49 ہزار 101 کورونا ٹیسٹ کیے گئے ، جن میں سے مزید 5 ہزار 292 مثبت کیسز سامنے آگئے اور اس طرح پاکستان میں کورونا کے مصدقہ مریضوں کی تعداد 810,231 ہوگئی ، اب تک سندھ میں 2 لاکھ80 ہزار 356 افراد میں کورونا کی تصدیق ہوچکی ہے ، صوبہ پنجاب میں یہ تعداد 2 لاکھ 96 ہزار 144 ہے ، جب کہ صوبہ خیبر پختونخوا میں ایک لاکھ 15 ہزار 596 افراد کورونا میں مبتلاء ہوچکے ہیں ، وفاقی دارالحکومت اسلام آباد میں یہ تعداد 74 ہزار 131 بتائی گئی ہے ، صوبہ بلوچستان میں 21 ہزار 945 میں کورونا کی تشخیص ہوئی ، آزاد کشمیر میں 16 ہزار 779 اور گلگت بلتستان میں 5 ہزار 280 افراد کورونا وائرس کا شکار ہوچکے ہیں ۔

بتایا گیا ہے کہ پاکستان میں گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران ملک بھر میں کورونا سے مزید 201 افراد کا انتقال ہوا ، جس کے بعد اب اس وبا سے جاں بحق ہونے والے افراد کی تعداد مجموعی طور پر 17 ہزار 530 ہوگئی ہے ، جب کہ کورونا کے سبب سب سے زیادہ اموات صوبہ پنجاب میں ہوئیں جہاں اب تک 8 ہزار 224 افراد جان کی بازی ہار چکے ہیں جب کہ صوبہ سندھ میں یہ تعداد 4 ہزار 624 رہی ، صوبہ خیبر پختونخوا میں کورونا 3 ہزار 201 جانیں نگل گیا ، صوبہ بلوچستان میں یہ تعداد 233 بتائی گئی ہے ، وفاقی دارالحکومت اسلام آباد میں 675 جب کہ گلگت بلتستان میں 105 اور آزاد کشمیر میں 468 افراد کورونا کی وجہ سے جان کی بازی ہار چکے ہیں۔

پنجاب حکومت نے افطار سے سحری تک ہر قسم کی سرگرمیوں پر مکمل پابندی لگادی ہیں۔ محکمہ صحت پنجاب کی جانب سے جاری نوٹیفکیشن کے مطابق نئی پابندیوں کا اطلاق فوری طور پر کیا جارہا ہے اور یہ 17 مئی تک نافذ رہیں گی۔

کرونا کی تیسری لہر پر قابو پانے کے لیے نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر نے ملک بھرمیں عید الفطرتک سیاحت اورسفری پابندیاں عائد کردی گئی ہیں