شادی یو ں‌بھی کی جا سکتی ہے! مہندی کی شام اللہ اور اسکے رسول صلی اللہ علیہ الہ وسلم کے نام

پلندری (کے ٹی وی نیوز) شادی ایسے بھی کی جا سکتی ہے ، آزاد کشمیر کے شہر پلندری پینالی کے رہائشی سردار اسباب شاھین کی شادی مہندی کی رسم کے بجائے محفل حسن قرات و میلاد النبی صلی اللہ وعلیہ وسلم منعقد ہوئی.

محفل کو بیاد استاذ العلماء پیر طریقت رہبر شریعت حافظ محمد سفیر خان صدیقی رحمتہ اللہ کے نام سے منسوب کیا گیا. اس پررونق محفل میں‌پاکستان ارو آزاد کشمیر سے علماء اکرام نعت خواں اور قراء نے شرکت کی.

محفل ،میلاد میں استاذ القراء قاری علی اکبر نعیمی، پیر سید پیرعارف حسین شاہ (سجادہ نشین پناگ شریف)، خطیب پاکستان مولانا حسنات چشتی ،مولانا غلام محی الدین صدیقی جانشین سفیر اہلسنت ،قاری غضفر چشتی، سردار عابد رزاق قاری شفیق مصطفوی نے خصوصی شرکت کی.

محفل میلاد میں عاشقان مصطفیٰ کی بڑی تعداد موجود تھی.

محفل حسن و قرات و نعت کا آغاز تلاوت کلام پاک اور نعت مقبول صلی اللہ وسلم سے ہوا .

پاکستان اور کشمیر سے ائے ہوےقراء نے لحن داودی کے ترنم سے حاضرین کو خوب مسرور کیا .

تقریب سے خطاب کرتے ہوئے مقررین کا کہنا تھا کہ ارباب شاھین نے معاشرے میں شادی کے موقع پر جہاں لوگ خرافات ڈھول،باجے،ناچ گانا کرتے ہیں وہی شادی کے موقع پر قرآن کی تعلیم اور قال رسول اللہ صلی اللہ و علیہ وسلم کی صدا بلند کی اور معاشرے کو پیغام دیا کہ انسان کی کامیابی آپ صلی اللہ علیہ کی سنت میں ہے .

تقریب سے خطاب کرتے ہوئے پیر عارف حسین شاہ کا کہنا تھا کہ قرآن مجید کی تعلیم عام کرنے اور رسول اکرم کی سنتوں پر عمل کر کے ہی ایک کامیاب زندگی بسر کی جا سکتی ہے، حافظ سفیر خان رحمہ اللہ نے پہاڑوں اور جنگلوں میں دین اسلام کی تعلیمات کو عام کیا ان پہاڑوں میں آج ایسی محافل کا ہوناان کی محنتوں کا ثمر ہے

تقریب سے خطاب کرتے ہوئے مولانا حسنات چشتی کا کہنا تھا کہ ارباب شاھین مبارکباد کے مستحق ہیں جنہوں نے خوشی کے موقع پر بھی دین داری کا ثبوت دیا.
ان کا کہنا تھا کہ مجلس نعت و قرات سے دلوں کو سکون ملتا ہے اللہ کے انوار و تجلیات کا ظہور ہوتا ہے . آج امت مسلہ نے قرآن کو چھوڑ دیا جس کی وجہ سے مسائل ہی مسائل ہیں ہمیں مدارس میں دینی اداروں میں قرآن حکیم کی تعلیمات کو عام کرنا ہو گا.
حافظ سفیر صدیقی مرحوم نے ساری عمر قرآن و حدیث کی اشاعت میں گزاری آج انہی کے فیض سے اس علاقہ میں شادیوں میں بھی محفل میلاد کا اہتمام کیا جا رہا ہے .

ارباب شاھین اور اسباب شاھین کےپورے خاندان کو خراج تحسین ہیش کرتا ہوں جنہوں نے یہ خوبصورت محفل سجائی.

تقریب کی دوسری نشت میں قاری علی اکبر نعیمی نے خصوصی تلاوت کی اور خطاب کیا اورکہا کہ اسباب شاھین جیسے نوجوان حقیقی معنوں میں دین اسلام کے داعی ہیں.

تقریب کے میزبان قاری ارباب اور صاحبزادہ غلام محی الدین نے مہمانوں کا شکریہ ادا کیا اور کہا ہے یہ آپ علماء کی محبت ہے کہ حضرت حافظ سفیر خان رحمہ اللہ کی یاد میں منعقدہ محفل میلاد میں شریک ہوئے تقریب کے اختتام پر اجتماعی دعا بھی کی گئی.